پڑوسی کے چند حقوق

Categories: Human Rights
Tags: ,
Posted on: February 16, 2018 at 5:24 pm
Views: 78

پڑوسی کے چند حقوق

قرآن پاک میں اللہ پاک ارشاد فرماتا ہے۔

پاس کے ہمسائے اور دور کے ہمسائے (کے ساتھ بھلائی کرو)۔”

(پ5،النساء:36)

اور حدیث شریف میں رسول اﷲ ﷺ نے فرمایا کہ : حضرت جبرائیل علیہ السلام مجھ کو ہمیشہ پڑوسیوں کے حقوق کے بارے میں وصیت کرتے رہے۔ یہاں تک کہ مجھے یہ خیال ہونے لگا کہ شاید عنقریب پڑوسی کو اپنے پڑوسی کا وارث ٹھہرا دیں گے۔

(صحیح مسلم ، کتاب البر والصلۃ ، باب الوصیۃ بالجاروالاحسان الیہ ، رقم۲۶۶۴،ص۱۴۱۳)

ایک حدیث میں یہ بھی ہے کہ ایک دن حضور ﷺ وضو فرما رہے تھے تو صحابہ کرام علیھم الرضوان آپ کے وضو کے دھووَن کو لوٹ لوٹ کر اپنے چہروں پر ملنے لگے یہ منظر دیکھ کر آپ ﷺ نے فرمایا کہ تم لوگ ایسا کیوں کرتے ہو۔۔۔ ؟

صحابہ کرام علیھم الرضوان نے عرض کیا کہ ہم لوگ اﷲعزوجل کے رسول ﷺ کی محبت کے جذبے میں یہ کررہے ہیں۔ یہ سن کر آپ ﷺ نے ارشاد فرمایا کہ جس کویہ بات پسند ہو کہ وہ اﷲ و رسول عزوجل و ﷺ سے محبت کرے۔ یا اﷲ و رسول عزوجل و ﷺ اس سے محبت کریں اس کو لازم ہے کہ وہ ہمیشہ ہر بات میں سچ بولے اور اس کو جب کسی چیز کا امین بنایاجائے تو وہ امانت ادا کرے اور اپنے پڑوسیوں کے ساتھ اچھا سلوک کرے۔

(شعب الایمان ، باب فی تعظیم النبی صلی اللہ علیہ وسلم … الخ ، رقم ۱۵۳۳،ج۲،ص۲۰۱)

اور رسول اﷲ صلی اللہ تعالیٰ علیہ واٰلہٖ وسلّم نے فرمایا کہ وہ شخص کامل درجے کا مسلمان نہیں جو خود پیٹ بھر کر کھالے اور اس کا پڑوسی بھوکا رہ جائے۔

(شعب الایمان،باب فی الزکوٰۃ، فصل فی کراہیۃ امساک الفضل… الخ ، رقم ۳۳۸۹، ج۳، ص۲۲۵)

چند مدنی پھول عرض کئے جاتے ہیں ان پر عمل کرنے کی نیت کرلیں۔

 (۱)اپنے پڑوسی کے دکھ سکھ میں شریک رہے اور بوقت ضرورت ان کی بن مانگے بغیر احسان جتائے ہر قسم کی امدادبھی کرتا رہے۔

 (۲)اپنے پڑوسیوں کی خبر گیری ، ان کی خیر خواہی اور بھلائی میں ہمیشہ لگا رہے۔

 (۳)کچھ تحفوں کا بھی لین دین رکھے چنانچہ حدیث شریف میں ہے کہ ’’ جب تم لوگ شوربا پکاؤ تو اس میں کچھ زیادہ پانی ڈال کر شوربے کو بڑھاؤ تاکہ تم لوگ اس کے ذریعہ اپنے پڑوسیوں کی خبر گیری اور ان کی مدد کر سکو۔‘‘

(صحیح مسلم، کتاب البر والصلۃ والاداب ،باب الوصیۃ بالجاروالاحسان الیہ، رقم ۲۶۲۵،ص۱۴۱۳)

 (۴)پڑوسی کے مال عزت آبرو کے معاملے میں بہت احتیاط برتے ان کی پردہ پوشی کرے ۔اپنی نگاہوں کو پڑوسی کی عورتوں سے دیکھنے سے خاص طور پر بچائے ۔

اللہ تعالیٰ سے دعا ہے کہ ہمیں اپنے پڑوسیوں کا حق ادا کرنے والا بنائے ۔۔۔ آمین ۔

( منجانب : سوشل میڈیا ، دعوت ِ اسلامی)